وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ


وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے تھر کے شہرنگر پارکر میں کالی داس ڈیم کا افتتاح کردیا۔

افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مراد علی شاہ نے کہا کہ ہم مزید 23 ڈیم بنا رہے ہیں۔ اب تھر بدلے گا، یہاں کی ترقی میں مقامی لوگوں کا حصہ ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ 2002 میں تھر سے ہمارا کوئی ممبر نہیں تھا۔ پھر یہاں سے سیٹیں لیتے گئے، آج پورا تھر پیپلز پارٹی کا ہے۔ ہم نے سب سے زیادہ تھر سے ووٹ لیے اور سیٹیں لیں۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ سندھ میں گندم کی پیداوار کا ہدف پورا کیا۔ وفاقی حکومت کی نااہلی سے آج آٹا مہنگا ہے۔ کل ہماری کابینہ کا اجلاس ہے۔ اجلاس میں گندم کی کم از کم قیمت میں کاشتکاروں کا خیال رکھا جائے گا۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا کہ گندم کی امدادی قیمت دو ہزار روپے ہونی چاہیے، سندھ کے کسانوں نے ہدف سے زائد گندم کاشت کی، دیگر تینوں صوبے نے اہداف مکمل نہیں کیے۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ تھر کے شہر ننگر پار کالی داس ڈیم کیلئے روانہ ہوئے تو تھر کول کے قریب کھاریو غلام کے مقام پر مظاہرین نے ان کا راستہ روک لیا۔

مظاہرین نے بیس منٹ تک وزیراعلیٰ کا راستہ بند کیے رکھا۔ اس موقع پر مراد علی شاہ گاڑی سے باہر آئے اور مظاہرین کے مطالبات سنے۔ وزیراعلیٰ کی یقین دہانی پر احتجاج ختم کردیا گیا۔

وزیراعلیٰ سندھ ننگر پار ڈیم کا افتتاح کرنے کے بعد خطاب شروع کیا تو اس دوران پنڈال سے آٹا سستا کرو اور نوکریاں دو کے نعرے گونج اٹھے۔ وزیراعلیٰ مظاہرین سے ملے اور یہاں بھی مسائل کے حل کی یقین دہانی کرائی۔

وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ ڈیم 33 کروڑو روپے کی لاگت سے تعمیر کیا گیا ہے یہ ڈیم نگرپارکراورقریبی گاؤں کی پورے سال کی ضروریات پوری کرے گا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *